“Dard Bhari Shayari Quotes” are poignant expressions of pain, heartache, and sorrow in poetic form. These quotes delve into deep emotions like loss, longing, and betrayal, resonating with those seeking solace and connection through shared feelings of suffering.

 

درد اٹهتا ہے تو تصور میں آجاتے ہیں
وہ خدا میرے درد کی عمر دراز کرے

میں روز کہتا ہوں خوش رہو تم
تم روز کہتی ہوں درد ہیں مجھے

mein roz kehta hon khush raho tum
tum roz kehti hon dard hain mujhe

دل تڑپ تڑپ کر تمہیں یاد کرتا ہے
محسوس کرتا ہے درد مگر بول نہیں سکتا

dil tarap tarap kar tumhe yaad karta hai
mehsoos karta hai dard magar bol nahi sakta

کیوں ہر اک شخص مجھے درد دے جاتا ہے
کیا میرے دل پہ لکھا ہے یہاں درد لیئے جاتے ہیں

kyun har ik shakhs mujhe dard day jata hai
kya mere dil pay likha hai yahan dard liye jatay hain

‏مصروف زندگی میں تیری یاد کے سوا
آتا نہیں ہے کوئی میرا درد بانٹنے

دُرست کر ہی لیا میں نے نظریہ اپنا،
کہ درد نہ ہو تو محبت مذاق لگتی ہے

dُrst kar hi liya mein ne nazriya apna ,
ke dard nah ho to mohabbat mazaaq lagti hai

میرے بعد کوئی نہ روۓ گا مجھ پر
میں سب کے دل میں اتنی نفرت بھر جاوں گا

بہت درد چھپے ہیں رات کے ہر پہلو میں
اچھا ہو کے کچھ دیر کے لیے نیند آجائے

bohat dard chupay hain raat ke har pehlu mein
acha ho ke kuch der ke liye neend aajay

میں مر جاؤں تجھے میری خبر نہ ملے.
تو ڈھونڈتا رہے اور تجھے میری قبر نہ ملے

mein mar jaoon tujhe meri khabar nah miley .
to dhoondata rahay aur tujhe meri qabar nah miley

مت پوچھنا کہ درد کس کس نے دیا
ورنہ کچھ اپنوں کے سر بھی جھک جائنگے

mat poochna ke dard kis kis ne diya
warna kuch apnon ke sir bhi jhuk jaynge

ہمیں آتی نہیں یہ پیار بھری شاعری
جس نے درد سننا ہو آ جائے محفل میں

hamein aati nahi yeh pyar bhari shairi
jis ne dard sunna ho aa jaye mehfil mein

ہم نے سمیٹے ہیں درد دنیا کے
تم سے ایک ہم نہ سمبھالے گئے

ہم تو درد لیکر بھی یاد کرتے ہیں
لوگ درد دے کر بھی بھول جاتے ہیں

hum to dard leker bhi yaad karte hain
log dard day kar bhi bhool jatay hain

میں نے کہا اک پل میں کیسے نکلتی ہے جان
اس نے چلتے چلتے میرا ہاتھ چھوڑ دیا

mein ne kaha ik pal mein kaisay nikalti hai jaan
is ne chaltay chaltay mera haath chore diya

مختصراتناکہ دوحرفوں سے بن جاتاھے دل
اورطویل اتناکہ اس میں دوجہاں کادردھے

درد اتنا کے ہر رگ میں ہے مہشر برپا
اور سکوں ایسا کے مر جانے کو جی چاہتا ہے

dard itna ke har rigg mein hai mehshar barpaa
aur sakoo aisa ke mar jane ko jee chahta hai

ﭘﮩﻠﮯ ﺗﻮ ﺍُﺱ ﻧﮯ ﻏﻢ ﮐﮯ ﻓﻮﺍﺋﺪ ﺑﯿﺎﮞ ﮐﺌﮯ
ﭘﮭﺮ ﻭﻗﻔﮧ ﻟﮯ ﮐﮯ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﺎ، ﺧﻮﺵ ﺭﮨﺎ ﮐﺮﻭ

‏کر ان کا ادب، رکھ انہیں سینے سے لگا کر
یہ درد ، یہ تنہائیاں ، مہمان ہیں محسن

یہ مت سوچنا کہ ہم غافل ہو گئے ہیں تیری یاد سے
بس تمہیں مصروف سمجھ کر زیادہ تنگ نہیں کرتے

yeh mat sochna ke hum ghaafil ho gaye hain teri yaad se
bas tumhe masroof samajh kar ziyada tang nahi karte

کاش کوی ایسا ھو جو گلے لگاکر کہے.
رویا نا کر ترے درد سے مجھے بھی درد ھوتا ھے

kash kawi aisa ho jo gilaay lagaakar kahe .
roya na kar tre dard se mujhe bhi dard hota he

میرے درد سے آخر تیرا رشتہ کیا ہے
دل جب بھی روتا ہے تم یاد آتے ہو

mere dard se aakhir tera rishta kya hai
dil jab bhi rota hai tum yaad atay ho

کیا پوچھتے ہو مجھ سے درد کہاں ہوتا ہے
ایک جگہ ہو تو بتاؤں کے یہاں ہوتا ہے

kya puchhte ho mujh se dard kahan hota hai
aik jagah ho to batau ke yahan hota hai

یقین نہ آئے تو اک بار پوچھ کر دیکھو۔
جو ہنس رہا ہے وہ زخموں سے چور نکلے گا

yaqeen nah aaye to ik baar pooch kar dekho .
jo hans raha hai woh zakhamo se chor niklay ga

تمہیں تو میں نے ہمدرد مانا تھا لیکن
مجھے تو سارے درد تم ہی سے ملے

tumhe to mein ne hamdard mana tha lekin
mujhe to saaray dard tum hi se miley

لگی ہوئی ہیں بہت سی بیماریاں مجھ کو
میں پھر بھی تیرا روگ پال سکتی ہوں

lagi hui hain bohat si bemariyan mujh ko
mein phir bhi tera rog paal sakti hon

کبھی محسوس کیجئے تپش لفظوں کی لکھتے نہیں
ہم درد واہ واہ سننے کے واسطے

kabhi mehsoos kijiyej tapish lafzon ki likhte nahi
hum dard wah wah suneney ke wastay

میں نے اکیلے سہے ہیں غم سارے،
سفرِ عشق میں میرا کوٸی ہمدرد نہ تھا

جب کوئی ہمدرد نہ تھا کوئی درد نہ تھا
جب سے ہمدرد مِلا اُسی سےپھر درد مِلا

jab koi hamdard nah tha koi dard nah tha
jab se hamdard mila usi se phir dard mila

گرہ جو لگ جائے تو سلجھنا اتنا بھی آساں نہیں
درد محبت سے سنبھلنا اتنا بھی آساں نہیں

زندگی نہ کر سکی اس درد کا علاج سکون
تب تب ملا ، جب جب تجھے یاد کیا

zindagi nah kar saki is dard ka ilaaj sukoon
tab tab mila, jab jab tujhe yaad kya

میرے تو درد بھی اوروں کے کام آتے ہیں،
میں رو پڑوں تو کئی لوگ مسکراتے ہیں

mere to dard bhi ouron ke kaam atay hain ,
mein ro paron to kayi log muskuratay hain

ہنستے ھوۓ چہروں کو غموں سے آزاد نہ سمجھو
تبسم کی پناہوں میں ہزاروں درد ہوتے ہیں

یہ میرے ادّب کی اِنتہا ھے کہ ،
اے عدم اُس کا وجُود ہو کے بھی،
اُس سے جُدا ہوں میں

yeh mere Adab ki aِnt_ha he ke ,
ae Adam uss ka wujood ho ke bhi ,
uss se juda hon mein

بہت دکھ درد دیے زمانے نے اے شہباز
مگر وہ سارے درد کم لگے تیرے اک درد سے

bohat dukh dard diye zamane ne ae Shahbaz
magar woh saaray dard kam lagey tairay ik dard se

ٹھوکروں کے نیل ہیں مُجھ پر سو،
اب عام سا پتھر نہیں ، نیلم ہُوں مَیں

thokaron ke neel hain mujh par so ,
ab aam sa pathar nahi, neelam hoon mein

ان ہواؤں میں سسکی کی صدا کیسی
ہے بیان کرتا ہےکوئی درد پرانا میراا

ہنس کے ہر دردکو سہا ہیے مینے
اس امید پر کے آج سیے بھتر کل ہوگا میرا

اس کی آواز سن لوں تو مل جاتا ہے سکون دل کو
دیکھو تو سہی میرے درد کا علاج کیسا ہے

is ki aawaz sun lon to mil jata hai sukoon dil ko
dekho to sahi mere dard ka ilaaj kaisa hai

Leave A Reply

Please enter your comment!
Please enter your name here