یہ محبت کے حادثے اکثر دلوں کو توڑ دیتے ہیں تم منزل کی بات کرتے ہو لوگ راہوں میں چھوڑ دیتے ہیں

yeh mohabbat ke haadsay aksar dilon ko toar dete hain tum manzil ki baat karte ho log raahon mein chore dete hain

علاقہ غیر کو سیراب کر رہی تھی وہ نہر رسیلے ہونٹ کہیں اور خشک ہو رہے تھے

ilaqa ghair ko sairaab kar rahi thi woh neher rasile hont kahin aur khushk ho rahay thay

مجھے صبر کرنے کی دیر ہے تم اپنا مقام کھو دو گے

mujhe sabr karne ki der hai tum apna maqam kho do ge

گزار دیتا ہو ہر موسم مسکراتے ہوے ایسا بھی نہیں کے بارشوں میں تو یاد آیا نہیں

guzaar deta ho har mausam muskuratay huve aisa bhi nahi ke baarisho mein to yaad aaya nahi

اب نہیں رہا انتظار کسی کا جو ہوں خود کہ لیے ہوں

ab nahi raha intzaar kisi ka jo hon khud ke liye hon

میں کسی اور کی توجہ ہوں آنکھ بھر کے نہ دیکھا کرے کوئی

mein kisi aur ki tawajah hon aankh bhar ke nah dekha kere koi

ہم تو وہاں بھی خاموش رہے جہاں لوگوں کے لہجے ان کے منہ پہ مارنے تھے

hum to wahan bhi khamosh rahay jahan logon ke lehjey un ke mun pay maarny thay

کتنا عجیب ہے ان کا انداز محبت روز رلا کے کہتے ہے …اپنا خیال رکھنا

kitna ajeeb hai un ka andaaz mohabbat roz rulaa ke kehte hai … apna khayaal rakhna

دینا کے بھی عجیب نرالے ہیں بے وفائی کرو تو روتے ہیں وفا کرو تا رولاتے ہیں

dena ke bhi ajeeb nirale hain be wafai karo to rotay hain wafa karo taa رولاتے hain

ع کے بعد غ لازم ہے عشق ہو اور غم نہ ہونا ممکن جن

ain ke baad gh lazim hai ishhq ho aur gham nah hona mumkin jin

تیری حسرت میرے دل میں یوں بس گئی ہے جیسے اک آندھے کو حسرت آنکھوں کی

teri hasrat mere dil mein yun bas gayi hai jaisay ik آندھے ko hasrat aankhon ki

زندگی میں سب لوگ رشتہ دار یا دوست بن کر نہیں آتے کچھ لوگ سبق بن کر بھی آتے ہیں

zindagi mein sab log rishta daar ya dost ban kar nahi atay kuch log sabaq ban kar bhi atay hain

یہ بھی رسم دنیا ہے دل بھر جانا بدل جانا اور پھر بچھڑ جانا

yeh bhi rasam duniya hai dil bhar jana badal jana aur phir bhichar jana

پھر کہی بھی پناہ نہیں ملتی محبت جب بے پناہ ہوجائے

phir kahi bhi panah nahi millti mohabbat jab be panah hojaye

میری وفا فریب تھی میری وفا پے خاک ڈال تجھ سا کوئی باوفا تجھ کو ملے خداکرے

meri wafa fraib thi meri wafa pay khaak daal tujh sa koi bawafa tujh ko miley khdakre

ساری خوشیاں ملا کے دیکھی ہیں تیرے جانے کا غم زیادہ ہے

saari khusihyan mila ke dekhi hain tairay jane ka gham ziyada hai

تم زمانہ دیکھ لو میں ابھی ادھر ہی ہوں

tum zamana dekh lo mein abhi idhar hi hon

فیصلہ تو تیرا تھا لیکن دل جو ٹوٹا وہ میرا تھا

faisla to tera tha lekin dil jo toota woh mera tha

ہم تعلیم خرید سکتے ہیں لیکن عقل خدا کا عطا کردہ تحفہ ہے

hum taleem khareed satke hain lekin aqal kkhuda ka ataa kardah tohfa hai

عقلمند ہے وہ شخص جو انجام سوچ کر کام کرے

aqalmand hai woh shakhs jo injaam soch kar kaam kere

مصیبت اگر انسان کو دولتمند نہیں تو عقلمند ضرور بنا دیتی ہے

museebat agar insaan ko doltmnd nahi to aqalmand zaroor bana deti hai

عقلمند اپنے عیب خود دیکھتا ہے اور بیوقوف کے عیب دنیا دیکھتی ہے

aqalmand –apne aib khud daikhta hai aur bewaqoof ke aib duniya dekhatii hai

محنت اتنی خاموشی سے کرو کہ تمھاری کامیابی شور مچا دے

mehnat itni khamoshi se karo ke tumhari kamyabi shore macha day

زندگی ریاضی کا سوال نہیں جس کا جواب معلوم ہو سکے

zindagi rayazi ka sawal nahi jis ka jawab maloom ho sakay

Leave A Reply

Please enter your comment!
Please enter your name here